دنیا سے تعلق کی بس اتنی ہی قدر ہو

 (پرانی بات مگر اس دفعہ منظوم)

دنیا سے تعلق کی بس اتنی ہی قدر ہو

ملاقات ملک الموت سے راہ میں گر ہو

"آگیا ہو وقت اپنا٫ کہے  وہ "چلو

"اوزار ہم زمین پر رکھ کر کہیں "چلو

سفر ؔ


Comments

Popular posts from this blog

نئی ٹیکسی

پیرویٔ رہنما میں رہنما کے ساتھ چل

ظرف سے زیادہ علم