زندگی تیرے لیئے کیا کیا کِیا ، کیا نہ کِیا

زندگی تیرے لیئے کیا کیا کِیا ، کیا نہ کِیا
حسرتا تیرے لیئے کیا کیا کِیا ، کیا نہ کِیا

تم سے تھا وعدہ ہمارا بھول جائیں گے تمہیں
ہم نے کرنا تھا وفا وعدہ کِیا ، کیا نہ کِیا

ہیوسٹن
۲۰۰۳

Comments

Popular posts from this blog

Putting Ideas in the public

بر بحر "گلس ہنس دیئے نقاب الٹ دی بہار نے"

نئی ٹیکسی